qalamkar.pk
کرتے ہیں قلم روز قلم کار کے بازو
تلوار لئے درہم و دینار کے بازو کرتے ہیں قلم روز قلم کار کے بازو آجائیے مولاؑ ،میں یہاں کب سے کھڑا ہوں پھیلائے ہوئے حسرتِ دیدار کے بازو ہمت ہے کسی کی مجھے رستے سے ہٹائے؟ میں تھام کے چلتا ہوں عزادار …